Investor Realtion

انویسٹرز کی معلومات

سالانہ اجلاسِ عام کا نوٹس

اطلاع دی جاتی ہے کہ گل احمد ٹیکسٹائل ملز لمیٹڈ کا 65واں سالانہ اجلاسِ عام مورخہ 28اکتوبر2017بروز ہفتہ بوقت صبح9:30بجے بمقام موسیٰ دی ڈیسائی ICAPآڈیٹو ریم ،انسٹی ٹیوٹ آف چارٹرڈ اکاؤنٹنٹس آف پاکستان ،G-31/8،چارٹرڈ اکاؤنٹنٹس ایونیو ،کلفٹن ،کراچی میں مندرجہ ذیل امور کی انجام دہی کے لیے منعقد کیا جا رہا ہے۔

عمومی کاروبار:
  1. 30جون2017کو ختم ہونے والے سال کے لیے ڈائریکٹرز اور آڈیٹرز کی رپورٹ کے ساتھ کمپنی کے مالیاتی گوشواروں کی وصولی اور غوروخوص۔
  2. بورڈ آف ڈائریکٹرز کی جانب سے تجویز کردہ 10فیصد حتمی نقد منافع منقسمہ پر غور کرنا اور اس کی منظوری دینا جو کہ 1روپیہ فی حصص ہے۔
  3. 30جون2018کو ختم ہونے والے سال کے لیے آڈیٹرز کی تقرری اور ان کے مشاہرے کا تعین۔
  4. سالانہ اجلاسِ عام میں انجام دئیے جانے والے کسی بھی دیگر کاروبار کی چیئرمین سے منظوری لینا۔
  5. خصوصی کاروبار:
  6. کمپنی کے اتھارائزڈ شیئر کیپٹل کو 4,000ملین روپے سے بڑھا کر 7,500ملین روپے کرنے پر غورو خوص اور منظوری، اور اس کے نتیجے میں میمورینڈم آف ایسو سی ایشن آف کمپنی میں ہونے والی تبدیلی کی منظوری اور اسے کمپنیز ایکٹ2017کے سیکشن134(3)کے تحت بطور خصوصی قرار دار منظور کرنا۔
  7. ۔مندرجہ ذیل قرار داد پر ترمیم یا بغیر ترمیم بطور خصوصی قرارداد غورو خوص اور منظوری:


    “طے پایا ہے کہ کمپنیز ایکٹ2017کے سیکشن199کے تحت خصوصی قرار داد جس کی منظوری درکار ہے اس کے مطابق، GTM USAکارپوریشن ۔USA، اسکائی ہوم کارپوریشن ۔USAاورGTM (یورپ)لمیٹڈ۔UK(کمپنی کی کُل ملکیتی ذیلی کمپنیاں)کو غیر ملکی کرنسیوں جو کہ 2ملین امریکی ڈالر (موجودہ 211ملین روپے پاکستانی کے مساوی ہیں)کی کارپوریٹ گارنٹیز اور بینک گارنٹیز مہیا کی جائیں بطور بینک سیکیورٹی منجانب GTM USAکارپوریشن ۔USA، اسکائی ہوم کارپوریشن۔USAاور GTM(یورپ)لمیٹڈ۔UK۔”


    “مزید طے پایا ہے کہ کمپنی کے چیف ایگزیکٹو آفیسر یا کمپنی سیکریٹری کو اختیار تقویض کیا جاتا ہے کہ وہ اس قرارداد کو منظور کرنے اور اس سلسلے میں تمام ضروری اقدامات کو انجام دینے کے لیے ضروری اقدامات بروئے کار لائیں۔”

کمپنیز ایکٹ2017کے سیکشن 134(3)کے تحت تمام شیئر ہولڈرز کو اس نوٹس کے ہمراہ خصوصی کاروبار سے متعلق آگاہی فراہم کر دی گئی ہے۔

حسب الحکم بورڈ
محمد سلیم غفار
کمپنی سیکریٹری کراچی:23ستمبر2017


نوٹ:

    1. ۔کمپنی کی حصص منتقلی کی کتب 20اکتوبر2017تا28اکتوبر2017(بشمول دونوں ایام)بند رہیں گی۔اس دوران کوئی حصص ٹرانسفر رجسٹریشن کے لیے قبول نہیں کیا جائے گا۔ہمارے شیئر رجسٹرار میسرز فیمکو ایسو سی ایٹس (پرائیوٹ)لمیٹڈ ،F-8متصل ہوٹل فاران نرسری،بلاک 6،پی ای سی ایچ ایس ،شاہراہِ فیصل کراچی پر 19اکتوبر2017کو کاروبار کے اختتام تک موصول ہونے والے ٹرانسفرز کو شیئر ہولڈرز کے لیے حتمی نقد منافع منقسمہ کی ادائیگی کے لیے بروقت تصور کیا جائے گا۔
    2. وہ اراکین جو اجلاس میں شرکت کرنے اور ووٹ ڈالنے کے حق دار ہیں وہ دوسرے اراکین کو اپنی جگہ اجلاس میں شرکت کرنے ،بولنے اور ووٹ ڈالنے کے لیے بطور پراکسی مقرر کر سکتا ہے۔پراکسیز کے موثر ہونے کے لیے ضروری ہے کہ وہ اجلاس شروع ہونے سے کم از کم48گھنٹے قبل باقاعدہ مہر شدہ اور دستخط شدہ کمپنی کے رجسٹرڈ شدہ دفتر پر موصول ہو جائیں۔پراکسی کا کمپنی ممبر ہونا لازمی ہے۔
    3. سی ڈی سی اکاونٹ ہولڈر ز/سب اکاؤنٹ ہولڈرز سے درخواست ہے کہ وہ اپنی شناخت کے لیے سالانہ اجلاسِ عام میں اپنا اصل کمپیوٹرائزڈ شناختی کارڈ یا پاسپورٹ معہ آئی ڈی نمبر اور سی ڈی سی اکاؤنٹ نمبر ساتھ لائیں۔ اگر پراکسیز ان شیئر ہولڈرز کی جانب سے دی گئی ہیں تو بینفشل اونرز کے کمپیوٹرائزڈ شناختی کارڈ یا پاپاسپورٹ کی تصدیق شدہ کاپیاں بھی جمع کروائیں ۔کارپوریٹ ادارے کی صورت میں بورڈ آف ڈائریکٹرز قرارداد/پاور آف اٹارنی معہ نامزدکے دستخط کے نمونے اجلاس کے وقت پیش کیے جائیں۔نامزد کو اجلاس میں شرکت کے وقت اپنی شناخت کے لیے اپنا اصل کمپیوٹرائزڈ شناختی کارڈ پیش کرنا ہو گا۔
    4. S.R.O 83(1)2012مورخہ5جولائی2012میں موجود SECPکے ڈائریکٹو کو یہ درکار ہے کہ منافع منقسمہ کے وارنٹس کے ساتھ رجسٹرڈ شیئر ہولڈرز یا نابالغ کی صورت میں مجاز شخص کے CNIC نمبرز موجود ہوں۔مستقبل میں منافع منقسمہ کے وارنٹس کے اجراء کے لیے شیئر ہولڈرز کے CNICنمبر کا ہونا ضروری ہے وگرنہ صورت SECPکے حکم مورخہ 3جون2016کے مطابق منافع منقسمہ کی ادائیگی روک دی جائے گی لہذا جن شیئر ہولڈرز نے اب تک اپنےCNICکی نقل فراہم نہیں کی ہے ان سے التماس کی جاتی ہے کہ وہ ہمارے شیئر رجسٹرار کو اپنےCNICکی تصدیق شدہ کاپیاں جمع کروائیں۔
    5. کمپنیز ایکٹ2017کے سیکشن 244میں درکار ضروریات کی تکمیل کے مطابق لسٹڈ کمپنی کے لیے لازمی ہے کہ وہ اپنے شیئر ہولڈرز کو ڈیوڈیڈ کی ادائیگی الیکٹرونک ذرائع استعمال کرتے ہوئے شیئر ہولڈرز کی جانب سے مہیا کردہ بینک اکاؤنٹ میں براہِ راست جمع کروائے۔ اس سلسلے میں سیکیورٹیز اینڈ ایکسچینج کمیشن آف پاکستان کے سال 2017کے سرکلرنمبر18بتاریخ یکم اگست2017کی تعمیل میں شیئر ہولڈرز سے التماس کی جاتی ہے کہ وہ کمپنی کے شیئر رجسٹرار کو تحریری طور پر اپنے بینک اکاؤنٹ کی متعلقہ تفصیلات فراہم کریں (اگر پہلے مہیا نہیں کی گئی ہوں تو)۔سی ڈی سی اکاؤنٹ ہولڈرز اپنی درخواست براہِ راست اپنے بروکر (پارٹسپنٹ)/ سی ڈی سی انویسٹر اکاؤنٹ سروسز کو جمع کروائیں۔ ممبر کی درست بینک اکاؤنٹ کی تفصیلات مورخہ20اکتوبر2017سے قبل اَپ ڈیٹ نہ ہونے کی صورت میں ایسے اراکین کو ڈیوڈنڈ کی ترسیل روک دی جائے گی۔
    6. ۔ سیکیورٹیز اینڈ ایکسچینج کمیشن آف پاکستان نے بذریعہSRO 787(1)2014کمپنیوں کو یہ سہولت دی ہے کہ وہ ممبران کی تحریری اجازت سے مالیاتی گوشوارے بذریعہ ای میل ارسال کر سکیں۔ وہ اراکین جو پڑتال شدہ گوشوارے بذریعہ ای میل حاصل کرنا چاہتے ہیں ان سے درخواست ہے کہ وہ اپنی تحریری منظوری کے ساتھ اپنا ای میل ایڈریس کمپنی کے شیئر رجسٹرار کو بھیج دیں۔CDCشیئر ہولڈرز سے درخواست ہے کہ وہ اپنے ای میل ایڈریس اور منظوری براہِ راست اپنے بروکر /(Participant)سی ڈی سی انویسٹر اکاؤنٹ سروسز کو جمع کروائیں۔
    7. SECPکے نوٹیفکیشن نمبر634(1)2014مورخہ 10جولائی2014کے مطابق شیئر ہولڈرز کی معلومات اور جائزے کے لیے 30جون2017کو ختم ہونے والے سال کے لیے کمپنی کے پڑتال شدہ مالیاتی گوشوارے اور بیانات کمپنی کی ویب سائٹ www.gulahmed.comپر اَپ لود کر دی گئی ہیں۔
    8. فنانس ایکٹ2017جو کہ یکم جولائی 2017سے موثر ہے ،اس کے مطابق انکم ٹیکس آرڈیننس 2001کے سیکشن 150کے تحت منافع منقسمہ کی ادائیگی میں سے انکم ٹیکس کی کٹوتی کی شرح پر نظرِ ثانی کی گئی ہے جو کہ مندرجہ ذیل ہے۔



      الف) انکم ٹیکس ریٹرنز کے فائلرز کے لیے 15.00فیصد
      ب) انکم ٹیکس ریٹرنز کے نان فائلرز کے لیے 20.00فیصد

      ایسے شیئر ہولڈرز جو فائلرز ہیں انہیں چاہئے کہ وہ اس بات کی یقین دہانی کر لیں کہ ان کے نام FBRکی ویب سائٹ پر موجود تازہ ترین ایکٹو ٹیکس پیئرز لسٹ میں موجود ہیں ورنہ انہیں نان فائلر تصور کیا جائے گااور ان کے نقد منافع منقسمہ پر ٹیکس کی کٹوتی 15.00فیصد کے بجائے 20فیصد کے حساب سے کی جائے گی۔

    9. FBRنے واضح کر دیا ہے کہ جہاں شیئرز مشترکہ اکاؤنٹس / ناموں کے ساتھ ہیں اس میں ہر اکاؤنٹ /مشترکہ ہولڈر کو انفرادی طور پر فائلرز یا نان فائلرز تصور کیا جائے گا اور ان کی شیئر ہولڈنگ کے مطابق ٹیکس کاٹا جائے گا۔جو شیئر ہولڈرز مشترکہ شیئر ہولڈنگ اسٹیٹس رکھتے ہیں ان سے درخواست ہے کہ وہ19اکتوبر2017تک مندرجہ ذیل فارمیٹ کے تحت اپنے شیئر ہولڈنگ تناسب کے بارے میں کمپنی کے شیئر رجسٹرار کو مطلع کریں۔
      دستخط قومی شناختی کارڈ نمبر شیئرز یا فیصد کی تعداد(تناسب) کمپیوٹرائزڈ شیئر ہولڈرز کا نام(بنیادی /مشترکہ ہولڈرز) فولیو /سی ڈی سی اکاؤنٹ نمبر

      اگر شیئرہولڈنگ کا تناسب موصول نہیں ہوتا ہے تو ہر مشترکہ شیئر ہولڈر کے شیئرز کا تناسب مساوی تصور کیا جائے گا اور ودہولدنگ ٹیکس بھی اسی کے مطابق کاٹا جائے گا۔

    10. منافع منقسمہ آمدنی پر ودہولڈنگ ٹیکس سے مستثنیٰ ہونے کے لیے ٹیکس مستثنیٰ سرٹیفکیٹ کی درست نقل کمپنی کے شیئر رجسٹرار کو کتابوں کی بندش سے پہلے فراہم کرنی ہو گیورنہ قابلِ اطلاق شرح کے مطابق منافع منقسمہ پر ٹیکس کاٹا جائے گا۔
    11. ۔کارپوریٹ شیئر ہولڈرز جو سی دی سی اکاؤنٹس رکھتے ہیں انہیں اپنے سی ڈی سی (Participants)کے ساتھ اپنے نیشنل ٹیکس نمبر کو اَپ ڈیٹ رکھنا ہو گاجبکہ کارپوریٹ فزیکل شیئر ہولڈرز کمپنی یا فیمکو ایسو سی ایٹس (پرائیوٹ ) لمیٹڈ کو اپنے این ٹی این سر ٹیفکیٹ کی کاپی بھیجیں۔شیئر ہولڈرز اپنے NTNیاNTNسرٹیفکیٹ بھیجتے ہوئے اپنی کمپنی کانام اور اپنا فولیو نمبر ضرور درج کریں۔
    12. شیئر ہولڈرز سے درخواست ہے کہ وہ اپنے پتے میں کسی بھی قسم کی تبدیلی سے کمپنی کے شیئر رجسٹرار کو فوراََ مطلع کریں۔شیئر ہولڈرز جوCDCاکاؤنٹس رکھتے ہیں وہ اپنے (Participants)کے ساتھ اپنا ایڈریس اَپ ڈیٹ رکھیں۔
    13. اراکین لاہور اور اسلام آباد میں ویڈیو کانفرنس کی سہولت حاصل کر سکتے ہیں ۔اس سلسلے میں براہِ مہربانی مندرجہ ذیل فارم کو پُر کریں اور سالانہ اجلاسِ عام سے 10دن قبل یہ فارم کمپنی کے رجسٹر ڈ پتے پر جمع کروائیں ۔اگر کمپنی اجلاس سے 10دن قبل ایسے ممبر سے منظوری وصول کرتی ہے جو 10فیصد یا زائد کی شیئرہولڈنگ رکھتے ہیں اور کسی جغرافیائی مقام سے ویڈیو کے ذریعے اجلاس میں شرکت کرنا چاہتے ہیں تو کمپنی اس شہر میں ویڈیو کا نفرنس کی سہولت دستیاب کرے گی جو کہ اس شہر میں سہولت کی دستیابی سے مشروط ہے۔
      کمپنی اجلاس سے 5دن قبل ممبران کو ویڈیو کانفرنس سہولت کے مقام سے آگاہ کر دے گی اور ساتھ ہی اس سہولت کو حاصل کرنے کے بارے میں مکمل معلومات بھی فراہم کرے گی۔

    میں/ہم __________کے __________بحیثیت گل احمد ٹیکسٹائل ملز کے ممبر__________ کے ہولڈرز،عام شیئر رجسٹر فولیو نمبر__________کے مطابق __________مقام پر ویڈیو کانفرنس سہولت حاصل کرنا چاہتے ہیں۔

    ________________________
    ممبران کے دستخط

    کمپنیز ایکٹ2017کے سیکشن 134(3)کے تحت خصوصی کاروبار سے متعلق بیان مادی حقائق

    28اکتوبر2017کو منعقدہ کمپنی کے سالانہ عام اجلاس میں خصوصی کاروبار سے متعلق مادی حقائق کا تعین کیا گیا ہے۔ ڈائریکٹرز نے23ستمبر2017کو اپنی ہونے والی میٹنگ میں مندرجہ ذیل امور کو بطور خصوصی قرار شیئر ہولڈرز سے منظور کروانے کے لیے تجویز کیے ہیں۔

    ایجنڈے کا آئٹم نمبر5

    کمپنی کے اتھارائزڈ کیپٹل شیئر میں اضافہ
    کمپنی کی ضروریات کے مطابق تجویز دی جاتی ہے کہ کمپنی کا اتھارائزڈ کیپٹل شیئر 4,000ملین روپے سے بڑھا کر7,500ملین روپے کر دیا جائے ۔اس مقصد کے لیے مندرجہ ذیل قرار دار کو بطور خصوصی قرار داد ترمیم یا بغیر ترمیم منظور کیا جائے۔

    1. طے پایا ہے کہ کمپنی کا اتھارائزڈ شیئر کیپٹل 4,000ملین روپے سے بڑھا کر7,500ملین روپے کر دیا جائے گا اور اس سلسلے میں 350,000,000عام شیئرز بحساب10روپے فی شیئر کا اجراء موجودہ شیئرز کے ساتھ ساتھ کیا جائے گا۔
    2. مزید طے پایا کہ اتھارائزڈ شیئر کیپٹل میں تبدیلی کے سبب میمورینڈم آف ایسو سی ایشن کے کلاز نمبر5میں تبدیلی کے بعد اسے اس طرح پڑھا جائے گا:
      “کمپنی کے کیپٹل 7,500,000,000روپے (سات ہزار پانچ سو ہزار ملین ) کو 750,000,000عام شیئرز بحساب10روپے فی شیئر تقسیم کیا جارہا ہے۔کمپنی کو اختیار حاصل ہے کہ کمپنیز ایکٹ 2017کی دفعات کے تحت کمپنی کے کیپٹل کو وقت کے ساتھ متعدد کلاسز میں بڑھا، گھٹا یا یا دوبارہ منظم کر سکتی ہے۔ “
    3. مزید طے پایا کہ کمپنی کے چیف ایگزیکٹو آفیسر یا سیکریٹری کو عمل درآمد کے لیے تمام رسمی کارروائیوں کے ساتھ بطور فردِ واحد مجاز بنایا جا تا ہے۔

    کمپنی کے ڈائریکٹرز مندرجہ بالا کاروبار کی ادائیگی میں کمپنی میں اپنی شیئر ہولڈنگ کی حد تک دلچسپی رکھتے ہیں۔

    ایجنڈے کا آئٹم نمبر6

    کارپوریٹ گارنٹیز اور بینک گارینٹیز مہیا کرنے کے لیے

    کمپنیز ایکٹ2017کے سیکشن199کی تعمیل میں متعلقہ کمپنیوں میں سرمایہ کاری بطور خصوصی قرار داد کمپنی کے عام اجلاس میں پیش کی جائے گی۔

    سال2002میں ، گل احمد ٹیکسٹائل ملز لمیٹڈ (کمپنی) نے اپنے کسٹمرز کی ضروریات پوری کرنے کے لیے گل احمد انٹر نیشنل لمیٹڈ (GAILFZC)(FZC)کا آغاز کیا، جو کہ مکمل طور پر اس کی ملکیت ہے اور متحدہ عرب امارات میں موجود ہے۔ عالمی سطح پر تیزی سے بڑھتی تجارتی سرگرمیوں اور بہترین مواصلاتی چیلنجز سے فائدہ اٹھانے کے لیے GAILFZCنے اپنی کُل ملکیتی ذیلی کمپنی GTM(یورپ)لمیٹڈ (GTMEL)کا UKمیں آغاز کیا اور GTM(یورپ)لمیٹڈ UK- نے اپنی کُل ملکیتی ذیلی کمپنی GTM USAکارپوریشنUSAاور Sky Home کارپوریشن USA-کا آغاز کیا۔
    تمام ذیلی کمپنیاں ٹیکسٹائل سے متعلق پروڈکٹس کی تجارت میں مصروفِ عمل ہیں۔

    تمام ذیلی کمپنیوں میں جناب محمد بشیر، چیئرمین ؛جناب محمد ذکی بشیر،چیف ایگزیکٹو آفیسر؛جناب زین بشیر اور جناب زید بشیر کمپنی کے نامزد ڈائریکٹرز کے طور پر موجود ہیں۔
    کمپنیز (متعلقہ کمپنیوں یا متعلقہ انڈرٹیکنگز میں سرمایہ کاریاں)ریگولیشنز2012 کے زیرِ تحت درکار معلومات ذیل میں مہیا کی جاتی ہے۔

    قرضوں اور پیشگی رقوم کی صورت میں:

    ایس آر او کے تحت درکار معلومات تفصیل نمبرشمار
    1. جی ٹی ایم USA کارپوریشن-ریاست ہائے متحدہ امریکہ
    2. اسکائی ہوم کارپوریشن- ریاست ہائے متحدہ امریکہ
    3. جی ٹی ایم (یورپ) لمیٹڈ- برطانیہ
    4. (گل احمد ٹیکسٹائل ملز لمیٹڈ (کمپنی) کے مکمل طور پر زیرِ ملکیت حتمی ذیلی کمپنیاں)

    شریک کمپنی یا شریک کاروبار کا نام ، اُس اہلیتی معیار کے ہمراہ جس کے تحت شراکت کا تعلق قائم کیا گیا ہے۔ (i).
    (دو) ملین امریکی ڈالر(USD) تک کے مساوی غیرملکی کرنسی میں کارپوریٹ ضمانتیں اور بینک ضمانتیں
    ، (جو آج کل تقریباً 211ملین روپے کے مساوی ہیں) ، جوکہ جی ٹی ایم USA کارپوریشن
    – ریاست ہائے متحدہ امریکہ، اسکائی ہوم کارپوریشن- ریاست ہائے متحدہ امریکہ اور جی ٹی ایم (یورپ) لمیٹڈ –
    برطانیہ کی جانب سے بینک سے قرض لیے جانے کی سیکورٹی کے طور پردرکار ہوں گی۔
    رقوم (ii).
    بینک سے حاصل شدہ اپنے قرضوں کے لیے جی ٹی ایم USA کارپوریشن- ریاست ہائے متحدہ امریکہ،
    اسکائی ہوم کارپوریشن- ریاست ہائے متحدہ امریکہ اور جی ٹی ایم (یورپ) لمیٹڈ- برطانیہ کے بینکاروں کو سیکورٹی
    کی فراہمی۔
    قرضوں یا پیشگی ادائیگیوں اور فوائد کا مقصد ، ان قرضوں اور پیشگی ادائیگیوں سے ممکنہ طور پر سرمایہ کار کمپنی اور اس کے اراکین مستفید ہوں گے۔ (iii)
    2007میں جی ٹی ایم (یورپ) لمیٹڈ-برطانیہ کے درکار 1.6ملین امریکی ڈالر تک کے مساوی غیرملکی کرنسی میں
    کمپنی کے اراکین کی جانب سے دی گئی۔
    اگر کوئی قرضہ مذکورہ اشتراکی کمپنی یا اشتراکی کاروبار کو فراہم کردیا گیاہے تو اس کی مکمل تفصیلات۔ (iv)
    ۔ جی ٹی ایم (یورپ) لمیٹڈ۔ برطانیہ
    30-06-2017کے اختتام پر

    جی بی پی پاؤنڈ مساوی پاکستانی روپوں میں
    پیڈ اَپ کیپیٹل 10,000 1,425,600
    ذخائر 267,189 38,090,464
    30-06-2017پر  

    277,189

     

    39,516,064

    مجموعی سرمایہ
    30-06-2017کو
     

    27.72

     

    3,951.61

    فی حصص بریک اَپ مالیت
    30-06-2017کو
     

    11.43

     

    1,629.67

    ۲۔ جی ٹی ایم USA کارپوریشن۔ ریاست ہائے متحدہ امریکہ
    30-06-2017کے اختتام پر

    جی بی پی پاؤنڈ مساوی پاکستانی روپوں میں
    پیڈ اَپ کیپیٹل 50,000 5,275,000
    ذخائر 85,906 9,063,083
    30-06-2017پر  

    135,906

     

    14,338,083

    مجموعی سرمایہ
    30-06-2017کو
    2.72 286.76
    فی حصص بریک اَپ مالیت
    30-06-2017کو
    (0.59) (62.61)

    ۳۔ اسکائی ہوم کارپوریشن۔ ریاست ہائے متحدہ امریکہ
    30-06-2017کے اختتام پر

    جی بی پی پاؤنڈ مساوی پاکستانی روپوں میں
    پیڈ اَپ کیپیٹل 10,000 1,055,000
    ذخائر -168,326 -17,758,393
    30-06-2017پر  

    -158,326

     

    -16,703,393

    مجموعی سرمایہ
    30-06-2017کو
     

    (15.83)

     

    (1,670,.34)

    فی حصص بریک اَپ مالیت
    30-06-2017کو

     

    (16.83) (1,775.84)
    اپنے حالیہ مالیاتی گو۷شواروں کی بنیاد پراشتراکی کمپنی یا اشتراکی کاروبارکی مالیاتی کیفیت جس میں بیلنس شیٹ اور منافع اور خسارے کے اکاؤنٹ کے اہم اجزاء بھی شامل ہوں۔ (v)
    غیرفنڈ یافتہ اور صرف کارپوریٹ ضمانتیں اور بینک ضمانتیں دی جائیں گی سرمایہ کار کمپنی کے حاصل شدہ قرضوں کی اوسط لاگت یا قرضوں کی عدم موجودگی کی صورت میں متعلقہ مدت میں کراچی انٹر بینک آفرڈ ریٹ (KIBOR) (vi)
    قابلِ اطلاق نہیں ہے۔ مارک اَپ لاگت درج ذیل کی ذمہ داری ہوگی:

    (I)جی ٹی ایم USA کارپوریشن-ریاست ہائے متحدہ امریکہ
    (II)اسکائی ہوم کارپوریشن- ریاست ہائے متحدہ امریکہ اور
    (III)جی ٹی ایم (یورپ) لمیٹڈ- برطانیہ

    عائد کردہ سود، مارک اَپ، منافع، فیس یا کمیشن وغیرہ کی شرح (vii)
    غیر فنڈ یافتہ اور صرف کارپوریٹ ضمانتیں اور بینک ضمانتیں دی جائیں گی۔ فنڈز کے ذرائع جہاں سے قرضے یا پیشگی رقوم فراہم کی جائیں گی۔ (viii)
    قابلِ اطلاق نہیں ہے۔ اگر قرضے اور پیشگی رقوم ، قرض پر لیے گئے فنڈز کو استعمال کرتے ہوئے دیے جارہے ہوں تو؛
    (I) قرض پر لیے گئے فنڈز سے قرضہ یا پیشگی رقم ادا کیے جانے کا جواز۔
    (II) ضمانتوں/ ان فنڈز کے حصول کے لیے رہن شدہ اثاثوں کی تفصیل، اگر دستیاب ہو؛ اور
    (III) سرمایہ کار کمپنی کے قرضوں کی واپسی کے شیڈول۔
    (ix)
    قابلِ اطلاق نہیں ہے۔ قرضہ لینے والی کمپنی یا کاروبار کو دیے گئے قرضے کے بدلے ضمانتی سیکورٹی کی تفصیلات ، اگر دستیاب ہوں؛ (x)
    قابلِ اطلاق نہیں ہے ۔ گر قرضے یا پیشگی ادائیگیاں تبادلے کی خصوصیات کی حامل ہوں یعنی یہ سیکورٹیز میں قابلِ تبدیل ہو ں تو یہ کیفیت مکمل تفصیلات بشمول مبادلاتی فارمولا، وہ صورتحال جس میں یہ تبادلہ وقوع پذیر ہوسکتا ہو اور تبادلے کے لیے قابلِ عمل وقت کے ساتھ فراہم کی جائے۔ (xi)
    قابلِ اطلاق نہیں ہے سرمایہ کی گئی کمپنی کو واپسی کا شیڈول اور قرضوں یا پیشگی ادائیگیوں کی شرائط ؛ (xii)
    یہ غیرفنڈ یافتہ سہولت ہے اور چونکہ ذیلی کمپنیاں، کمپنی کی جانب سے کُل ملکیتی میں ہیں اس لیے اس پر کوئی
    اثرات مرتب نہیں ہوں گے۔
    اشتراکی کمپنی یا اشتراکی کاروبار کے ساتھ تجویز کردہ سرمایہ کاری کے حوالے سے طے پائے گئے یا آئندہ طے پائے جانے والے تمام معاہدوں کی نمایاں خصوصیت؛ (xiii)
    تینوں کمپنیاں مکمل طور پر 100فیصد گل احمد ٹیکسٹائل ملز لمیٹڈ کے زیرَ ملکیت ذیلی کمپنیاں ہیں اور اس کے علاوہ
    کوئی دیگر حصص یافتگان نہیں ہیں
    جناب محمد بشیر، چیئرمین، جناب محمد ذکی بشیر، چیف ایگزیکٹیو آفیسر، جناب زین بشیر اور جناب زیاد بشیر، کمپنی کے
    ڈائریکٹرزدرج بالا ذیلی کمپنیوں کے بھی نامزد ڈائریکٹرز ہیں۔
    اشتراکی کمپنی یا اشتراکی کاروبار یا زیرِ غور ٹرانزیکشن میں ڈائریکٹرز، معاونین، اکثریتی حصص مالکان اور ان کے عزیز و اقارب کا براہِ راست یا بالواسطہ مفادیا دلچسپی، اگر کوئی ہو (xiv)
    کوئی نہیں ٹرانزیکشن کو سمجھنے کے لیے اراکین کو درکار دیگر دستیاب شدہ اہم تفصیلات؛ اور (xv)
    قابلِ اطلاق نہیں اشتراکی کمپنی یا اشتراکی کاروبار کے کسی بھی ایسے پراجیکٹ میں سرمایہ کاری کی صورت میں کہ جس کی کاروباری سرگرمیوں کا ابھی آغاز نہ ہوا، درج بالا مذکورہ معلومات کے ساتھ ساتھ ذیل میں دی گئی مزید معلومات بھی درکار ہوں گی، جن میں شامل ہیں:
    (I) پراجیکٹ کی تفصیل اور اس کے تصوریا نقطۂ آغاز سے لے کر اب تک کا ریکارڈ؛
    (II) آغاز کی تاریخ اور تکمیل کی متوقع تاریخ؛
    (III) وہ مدت جس میں متعلقہ پراجیکٹ تجارتی سرگرمیوں کا آغاز کردے گا؛
    (IV) پراجیکٹ میں لگائے گئے مجموعی سرمائے پر متوقع منافع؛ اور
    (V) معاونین کی جانب سے نقد اور غیر نقد رقوم میں فرق کو ملحوظ رکھتے ہوئے سرمایہ کاری کیے گئے یا آئندہ کیے جانے والے فنڈز ؛
    (xvi)

    ڈائریکٹرز،ان کے شوہر/بیوی یا شیئر ہولڈرز درج بالا خصوصی کاروبار میں دلچسپی نہیں رکھتے اور ان کی حیثیت صرف کمپنی کے حصص مالکان کی ہے۔

پراکسی فارم

میں /ہم ______________________________________________________________
ساکن__________________________________________________________________________________
بحیثیت گل احمد ٹیکسٹائل ملز کا/کے ایک رکن اور ہولڈر _____________________________________________
عمومی شیئرز رکھتا ہوں اپنی جانب سے نامزد کرتا ہوں ________________________________________________
ساکن ________________________________________________
اور ایسا نہ ہونے کی وجہ سے محترم/محترمہ ________________________________________________
کے ________________________________________________کو 28اکتوبر2017کو منقعدہ کمپنی کے پینسٹھویں سالانہ اجلاسِ عام میں میری/ہماری جانب سے بطور پراکسی مقرر کرتا/کرتے ہیں تا کہ وہ اجلاس میں شرکت کرے اور ووٹ ڈالے۔

  1. گواہ __________________ اس پر میری طر ف سے _______دن کے _______۲۰۱۷ کو دستخط کیے گئے ۔
    نام: ____________________
    پتہ: __________________ دستخط شدہ:___________________
    کمپیوٹرائزڈ قومی شناختی کارڈ نمبر: ____________________________

    5روپے کی ریوینیو مہر چسپاں کریں۔

  2. ۔ گواہ :_________________۔
    نام: __________________ فولیو نمبر /سی ڈی سی اکاؤنٹ نمبر:_________________
    پتہ: _________________
    کمپیوٹرائزڈ قومی شناختی کارڈ نمبر:_________________

    نوٹس:

  1. ممبر جو ووٹ ڈالنے کا حقدار ہے وہ پراکسی مقرر کر سکتا ہے۔ پراکسیز کے موثر ہونے کے لیے ضروری ہے کہ وہ اجلاس شروع ہونے سے 48گھنٹے قبل باقاعدہ مہر شدہ اور دستخط شدہ کمپنی کے رجسٹرڈ پتے پر موصول ہو جائیں۔
  2. ایسے شیئر ہولڈرز جو اپنے شیئرز سینٹرل ڈپازٹری کمپنی میں جمع کروا چکے ہیں ،ان کی جانب سے جمع کروائی گئی پراکسیز کے ساتھ بینیفشل اونرز کے کمپیوٹرائزڈ قومی شناختی کارڈ یا پاسپورٹ کی تصدیق شدہ کاپیوں کا ہونا صروری ہے ۔کارپوریٹ ممبران کے نمائندے اس مقصد کے لیے درکار عمومی دستاویزات اپنے ہمراہ لائیں۔ پراکسی کے لیے کمپنی کا رکن ہونا لازمی ہے۔
  3. اگر کوئی رکن ایک سے زائد پراکسی مقرر کرتا ہے اور کمپنی میں ایک سے زائد پراکسی کے دستاویزات جمع کرواتا ہے ۔ان دستاویزات کو غلط سمجھا جائے گا
  4. ۔اگر کوئی ممبر کارپوریٹ ادارہ ہے تو اس کیcommon sealپراکسی فارم پر لگی ہونی چاہئے۔
  5. ۔سی ڈی سی اکاؤنٹ ہولڈر ہونے کی صورت میں ،پراکسی فارم کے ساتھ بینیفشل اونرز کے تصدیق شدہ کمپیوٹرائزڈ قومی شناختی کارڈ یا پاسپورٹ کی تصدیق شدہ کاپی فراہم کریں۔

ایس ای سی پی کی سرمایہ کار شکایت:

ڈاؤن لوڈ سرمایہ کار شکایت فارم